رموز شاعری میری غزلیں اورعروض

بے دام ہم بکے سرِ بازارعشق میں – غزل فاروق درویش ۔ بحر، اوزان اوراشاراتِ تقطیع


    بے دام ہم بکے سر ِ بازار عشق میں
رسوا ہوئے جنوں کے خریدار عشق میں

   زنجیریں بن گئیں میری آزادیاں حضور
زندان ِ شب ہے کوچہ ء دلدارعشق میں

    درپیش پھر سے عشق کو صحرا کا ہے سفر
نیزوں پہ سر سجے سوئے دربارعشق میں

    خون ِ جگر سے لکھیں گے مقتل کی داستاں
روشن ضمیر و صاحب ِ اسرارعشق میں

   خورشید و ماہتاب سے در کی تلاش میں
دشت ِ سفر میں یار ہوئے خوارعشق میں

        دیتے ہیں بت کدوں میں اذانِ لا الہ کی ہم
رقصاں ہیں ہُو کی تال پہ سرشارعشق میں

  جلتے ہوئے فراق سے روشن ہوئے چراغ
آتش فشاں سے لوگ ہیں بیدارعشق میں

   پوشاک ِ فقر اوڑھے دو عالم شناس لوگ
ٹھہرے ہیں سوئے دار سزاوارعشق میں

   درویش ہم سخن وہ قلندر ہیں وقت کے
لے کر چلے جو پرچم ِ احرارعشق میں

   (فاروق درویش)

   بحر :- بحر مضارع مثمن اخرب مکفوف محذوف

   ارکان ۔۔۔۔۔ مفعول ۔۔۔۔۔ فاعلات ۔۔۔۔۔ مفاعیل ۔۔۔۔۔۔ فاعلن
ہندسی اوزان ۔۔۔۔ 122 ۔۔۔۔ 1212۔۔۔۔۔ 1221 ۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔

  آخری رکن فاعلن ( 212 ) کی جگہ عمل تسبیغ کیلئے فاعلان ( 1212) بھی جائز ہو گا

بے ۔۔۔۔۔دا ۔۔۔۔ م ۔۔۔۔۔  122
ہم ۔۔۔۔۔۔ب ۔۔۔۔۔ کے۔۔۔۔ س ۔۔۔۔  1212
رے ۔۔۔ با۔۔۔۔ زا ۔۔۔۔ ر ۔۔۔۔۔  1221
عش ۔۔۔۔۔۔ ق ۔۔۔۔۔ میں ۔۔۔۔۔  212

رس ۔۔۔۔۔ وا ۔۔۔۔۔۔ ہ ۔۔۔۔۔۔۔  122
ئے۔۔۔۔ج ۔۔۔ نوں ۔۔۔۔۔ کے۔۔۔۔۔۔  1212
خ ۔۔ ری ۔۔۔۔۔ دا ۔۔۔۔ ر ۔۔۔۔۔  1221
عش۔۔۔ ق ۔۔۔۔۔ میں ۔۔۔۔۔۔  212

نوٹ: دیتے ہیں  اذاں بت کدوں میں لا الہ کی ہم کے مصرع  کے حوالے سے جو احباب یہ اعتراض کرتے ہیں کہ لا الہ میں الہ کا وزن کم ہے سو ہم اضافی ہے ان  کیلئےاپنے موقف کی وضاحت پیش کرنا ضروری سمجھتا ہوں۔

لا الہَ الاللہُ اور لا الہ میں فرق ھے اگر لا الہ کو اگلے الاللہ سے جوڑیں گے تو ،، الہَ ،، بولا جائے گا ، اگر آپ ،، وہ مجھ سے ہوئے ہم کلام اللہ اللہ ،، کی تقطیع کریں تو مجھ مبتدی کا موقف سمجھ پائیں گے کہ ،، اللہ ۔۔ کو مفعول میں بیں باندھنا درست ھے اور جہاں صوتی ادائیگی اجازت دے تو فعلن اور حتیٰ کہ فعل میں بھی جیسا کہ ،، ہم کلام اللہ اللہ ،، یا ” یہ رنگینیِ نو بہار اللہ اللہ ” ۔ سو میری تقطیع میں ۔ دیتے ( 22) ہیں (1) بت (2) ک(1) دوں(2) میں اذاں (21) لا (2) الہ (21) کی(1) ہم(2) ۔۔ سو مجھ کم علم کے مطابق یہاں ،، ہم ،، اضافی نہیں ہے۔۔ حضرت اقبال کے مصرع ” اے لا الہ کے وارث باقی نہیں ہے تجھ میں ” میں بھی لالہ اسی وزن پر باندھا گیا ہے۔

ishq-me

اصولِ تقطیع

یاد رکھئے کہ ” کیا” اور “کیوں” کو دو حرفی یعنی “کا” اور “کوں ” کے وزن پر باندھا جائے گا ۔ کہ، ہے، ہیں، میں، وہ، جو، تھا، تھے، کو، کے ، تے ، رے اور ء جیسے الفاظ دو حرفی وزن پر بھی درست ہیں اور انہیں ایک حرفی وزن میں باندھنا بھی درست ہیں ۔ لہذا ان جیسے الفاظ کیلئے مصرع میں ان کے مقام پر بحر میں جس وزن کی سہولت دستیاب ہو وہ درست ہو گا ۔

ایسے ہی “ے” یا “ی” یا “ہ” پر ختم ہونے والے الفاظ کے ان اختتامی حروف کو گرایا جا سکتا ہے ۔ یعنی جن الفاظ کے آخر میں جے ، گے، سے، کھے، دے، کھی، نی، تی، جہ، طہ، رہ وغیرہ ہو ان میں ے، ی یا ہ کو گرا کر انہیں یک حرفی وزن پر باندھنا بھی درست ہو گا اور اگر دوحرفی وزن دستیاب ہو تو دو حرفی وزن پر بھی باندھا جا سکتا ہے۔ لیکن شاہ، بادشاہ، نگاہ جیسے الفاظ میں اپنی پوری صوتی حیثیت کے ساتھ موجود “ہ” گرانا غلط ہے۔

اسی طرح اگر کسی لفظ کے اختتامی حرف کے نیچے زیر ہو اسے دو حرفی وزن پر بھی باندھا جا سکتا ہے اور یک حرفی وزن پر بھی باندھا جا سکتا ہے۔ ( مثال : دشت یا وصال کے ت یا لام کے نیچے زیر کی صورت میں انہیں دشتے اور وصالے پڑھا جائے گا ۔ ایسے الفاظ کی اختتامی ت یا لام کو بحر میں دستیاب وزن کے مطابق یک حرفی یا دو حرفی باندھنے کی دونوں صورتیں درست ہوں گی ) ۔

تقطیع کرتے ہوئے یہ بات دھیان میں رہے کہ نون غنہ اور ھ تقطیع میں شمار نہیں کئے جائیں گے یعنی تقطیع کرتے ہوئے ، صحراؤں کو صحراؤ ، میاں کو میا، خوں کو خو، کہیں کو کہی ۔ پتھر کو پتر اور چھیڑے کو چیڑے پڑھا جائے گا

فاروق درویش

 

اپنی رائے سے نوازیں

About the author

admin

4 Comments

Click here to post a comment

Leave a Reply

  • ITS V V NICE
    SIR I WRITE SOME THINGS BUT ,I AM NOT SURE THESE LINES R GOOD OR NOTHING
    KIYA AAP MERI HELP KAR SAKTAY HAIN K MAIN UN KI TRASH KHRASH KARWA SAKOON
    MUJAY SHAIR LIKHNAY KA BOHAT SHOUK HAY
    DUSRI BAAT K MARAY PASS URDU WRITING KA SOFTWARE NAHI HAY AGAR KOI LINK SEND KAR DAIN TU URDU MAIN LIKH KAR AAP SE APNI DRUSTGI KARWA LIYA KAROON
    MY FACEBOOK ID AND POETRY NAME IS (TANHA AJNABI)

    I ALSO LIKE UR WRITING . THATS WHY I NEED UR HEALP
    AGAR AAP YEH NAHI KAR SAKTAY MERA MATLAB AAP MASROOF HAIN TU ITS OK
    I AM V THANKFULL TO U

    • سلام و آداب

      جی برادر ضرور ۔۔۔۔۔۔۔میں حاضر ہون ہر طرح کی راہنمائی کیلئے

  • بہت سکریہ سر جئ پاک اردو انسٹالر ویب سایٹ پر مہیا کرنے کا

<head>
<script async src=”//pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js”></script>
<script>
(adsbygoogle = window.adsbygoogle || []).push({
google_ad_client: “ca-pub-1666685666394960”,
enable_page_level_ads: true
});
</script>
<head>

Featured

%d bloggers like this: