Category - رموز شاعری

رموز شاعری کلاسیکل شاعری

کسی کو دے کے دل کوئی نوا سنجِ فغاں کیوں ہو۔ مرزا غالب ۔ بحر، اوزان و اصولِ تقطیع

کسی کو دے کے دل کوئی نوا سنجِ فغاں کیوں ہو نہ ہو جب دل ہی سینے میں تو پھر منہ میں زباں کیوں ہو وہ اپنی خو نہ چھوڑیں گے ہم اپنی وضع کیوں چھوڑیں سبک سر بن کے کیا...

جواں ترنگ دورحاضر کے شعرا رموز شاعری

میں اپنے آئینہء دل کے روبرو بیٹھا : فلائیٹ لفٹیننٹ بہزاد حسن شہاب

میں اپنے آئینہ ء دل کے روبرو بیٹھا خود اپنی شکل کو تکتا ہوں ہوبہو بیٹھا مئے نظارہ کی خاطر اس انجمن میں تری لئے ہوئے میں رہا آنکھ کا سبو بیٹھا اب آنسوؤں کی رواں...

رموز شاعری میری غزلیں اورعروض

دریوزہ گری حرفہء درویش وقلندر۔ غزل فاروق درویش ۔۔۔۔ ڈاکٹر عبدالقدیر کے نام

در یوزہ گری حرفہء درویش و قلندر کشکولیء شب پیشہ ء دارا و سکندر   غدار ِ حرم فتنہ ء مغرب کے مصاحب خیرات ِ صلیبی ہے منافق کا مقدر   کھلتے ہیں یہ اسرار ِ قلندر...