بحرِ رمل مثمن مخبون محذوف مقطوع، رموز شاعری، ساغر صدیقی، غزل، کلام ساغر، بحر و اوزان، بحر رمل، اردو شاعری

رموز شاعری

غزل ساغر صدیقی ۔ بحر و اوزان اور اصول تقطیع

    جب گلستاں میں بہاروں کے قدم آتے ہیں یاد بُھولے ہوئے یاروں کے کرم آتے ہیں    …

Read More »
Back to top button
Close
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker